Best Urdu Sad Shayari Collection

Best Urdu Sad Shayari Collection

Urdu Shayari

        Shayari literary work in which the expression of feelings and ideas is given intensity by the use of distinctive style and rhythm; Ghazals collectively or as a genre of literature. Poetry is called Shayari in Urdu and Hindi literature. Poetry word is derived from Medieval Latin Poetria. William Wordsworth defined poetry (Shayari) as “the spontaneous overflow of powerful feelings,”. Shayari is the best way to show your intensity of emotions. Shayari is a vast subject, as old as history and older. Shayari is an important part of Urdu and Hindi literature. Allama Muhammad Iqbal, Mirza Ghalib, Meer Taqi Meer, Akbar Allahabadi, Faiz Ahmad Faiz, Ahmad Fraz, Wasif Ali Wasif and Haidar Ali Atish are most famous Shairs of Urdu Shayari.
       Shayari express our emotions instantly to readers or listeners. Some Shayari types are specific to particular cultures and genres and respond to characteristics of the language in which the poet writes.


Shayari Genres:
1.Narrative Poetry (Shayari) is a genre of poetry that tells a story.
2.Lyric Shayari is a genre that, unlike Narrative and dramatic poetry, does not attempt to tell a story but instead is of a more Personal nature.
3.Dramatic Shayari is darama written in verse to be spoken or sung, and appears in varying, sometimes related forms in many cultures.
4.Speculative Shayari, also known as fantastic poetry (Shayari).
5.Prose Shayari is a hybrid genre that shows attributes of both prose and poetry.
6.Light shayari, is poetry that attempts to be humorous.

Urdu Shayari collection:

عجیب بے بسی کا موسم ہے دل کے آنگن میں

ترس گئے ہیں تیرے ساتھ گفتگو کے لئے
Ajeeb be basi ka mausam hai dil ke aangan mein
Taras gaye hain tairay sath guftagu ke liye

دل اس کا بھی تھا دل میرا بھی تھا ، فرق صرف اتنا تھا
وہ پتھر تھا جو سلامت رہا ، یہ شیشہ تھا جو ٹوٹ گیا
Dil is ka bhi tha dil mera bhi tha, farq sirf itna tha
Woh pathar tha jo salamat raha, yeh sheesha tha jo toot gaya

اب وہ یاد بھی آئے تو چپ رہتے ہیں
کہ آنکھوں کو خبر ہوئی تو برس جائیں گی
Ab woh yaad bhi aeye to chup rehtay hain
Keh aankhon ko khabar hui to baras jayen gi

کہتے تو جو دل کیا چیز ہے جاں بھی لٹا دیں گے
آج کہتے ہیں چھوڑدو ہاتھ میری عزت کا سوال ہے
Kehte to jo dil kya cheez hai jaan bhi luta den ge
Aaj kehte hain chor do haath meri izzat ka sawal hai

وہی اپنی طرز وفا رہی ، وہی انکی مشق جفا رہی
وہ ظلم کرتے ہیں اس طرح جیسے میرا کوئی خدا نہیں
Wohi apni tarz e wafa rahi, wohi unki mashq e jfaa rahi
Woh zulm karte hain is terhan jaisay mera koi khuda nahi

دھوکہ دینا تو محبت والوں کی رسم وفا ہے فراز
پھول خوشبو کے لئے ہوتے تو لوگ جنازے پہ نہ ڈالتے
Dhoka dena to mohabbat walon ki rasam e wafa hai fraz
Phool khusbhoo ke liye hotay to log janazay pay nah daaltay

جسم اس کا بھی مٹی کا ہے میری طرح
پھر کیوں میرا ہی دل تڑپتا ہے اس کے لئے
Jism is ka bhi matti ka hai meri terhan
Phir kyun mera hi dil tarapta hai is ke liye

موسم کی طرح بدلتے ہیں اس کے عہد
اوپر سے یہ ضد کہ مجھ پہ اعتبار کرو
Mausam ki terhan bdalty hain us ke ehd
Opar se yeh zid ke mujh pay aitbaar karo

مجھے بھی سکھادو بھول جانے کا ہنر
مجھ سے راتوں کو اٹھ اٹھ کر رویا نہیں جاتا
Mujhe bhi sekado bhool jany ka hunar
Mujh se raton ko uth uth kar roya nahi jata

Urdu sad Shayari

غم بھی دئیے تو یوں کہ نہ واپس لئے کبھی
ان کے ہماری ذات پہ احسان ہی رہے
Gham bhi dyie to yun ke nah wapas liye kabhi
Un ke hamari zaat pay ahsaan hi rahay

بس اک بار درد دل کو ختم کردو
وعدہ کرتے ہیں پھر کبھی محبت نہیں کرینگے
Bas ik baar dard dil ko khatam kardo
Wada karte hain phir kabhi mohabbat nahi karain gay

مجھے معلوم ہے تم خوش بہت ہو اس جدائی سے
اب خیال رکھنا اپنا ، تمہیں تم جیسا نہ مل جائے
Mujhe maloom hai tum khush bohat ho is judai se
Ab khayaal rakhna apna, tumhe tum jaissa nah mil jaye

دل تھا اکیلا اورغم تھے ہزار
افسوس اکیلے کو مل کے ہزاروں نے لوٹا
Dil tha akela aur ghum they hazaar
Afsos akailey ko mil ke hazaron ne lota

نہ شوق دیدار نہ فکر جدائی
کتنے خوش نصیب ہوتے ہیں وہ لوگ جو محبت نہیں کرتے
Nah shoq e deedar nah fikar e judai
Kitney khush naseeb hotay hain woh log jo mohabbat nahi karte

ٹوٹ کر بھی دھڑکتا رہتاہے
دل سا کوئی وفادار نہیں دیکھا
toot kar bhi dhadakataa rhta hai
Dil sa koi wafadar nahi dekha

مل جائے گا ہم کو بھی کوئی ٹوٹ کے چاہنے والا
اب شہر کا شہرتو بے وفا نہیں ہوتا
Mil jaye ga hum ko bhi koi toot ke chahanay wala
Ab shehar ka shehar to be wafa nahi hota

لوگ شامل تھے اور بھی لیکن
دل تیری کوششوں سے ٹوٹا ہے
Log shaamil they aur bhi lekin
Dil teri koshisho se toota hai

 

وہ اس قدر اپنی ذات میں الجھا رہا محسن
کہ وہ کس کس کو بھول گیا اسے خبر نہ ہوئی
Woh is qader apni zaat mein uljha raha Mohsin
Keh woh kis kis ko bhool gaya usay khabar nah hui

نہ ہاتھ تھام سکے نہ پا سکے دامن
بہت قریب سے اٹھ کر بچھڑ گیا کوئی
Na haath thaam sakay nah pa sakay daman
Bohat qareeb se uth kar bhichar gaya koi

غم کی جاگیر وراثت میں ملی مجھ کو
اپنی جاگیر میں رہتا ہوں نوابوں کی طرح
Gham ki jageer waarsat mein mili mujh ko
Apni jageer mein rehta hon nawabon ki terhan

حیرت تو یہ ہے کہ تو بھی کمسن تو نہیں ہے
پھر کیوں میں تیرے ہاتھوں میں کھلونوں کی طرح ہوں
Herat to yeh hai ke to bhi kamsin to nahi hai
Phir kyun mein tairay hathon mein khilonon ki terhan hon

وہ چلا گیا مجھے چھوڑ کر میں بدل نہ پایا عادتیں
اسے سوچنا اسے چاہنا میرا آج بھی معمول ہے
Woh chala gaya mujhe chore kar mein badal nah paaya adaten
Usay sochna usay chahna mera aaj bhi mamool hai

 

اسے تو کھو دیا اب نجانے کس کو کھونا ہے
لکیروں میں جدائی کی علامت اب بھی باقی ہے
Usay to kho diya ab najane kis ko khona hai
Lakiron mein judai ki alamat ab bhi baqi hai

محبت دیکھی میں نے زمین کے لوگوں کی وصی
جہاں کچھ دام زیادہ ہوں وہاں لوگ بک جاتے ہیں
Mohabbat dekhi mein ne zameen ke logon ki wasii
Jahan kuch daam ziyada hon wahan log buk jatay hain

ہم نے کہا اگر بھول جاؤ ہمیں تو کمال ہو جائے
ہم نے تو فقط بات کی اس نے کمال کر دیا
Hum ne kaha agar bhool jao hamein to kamaal ho jaye
Hum ne to faqat baat ki is ne kamaal kar diya

کبھی کافر کبھی مجرم بنا شہر منافق میں
سزائے موت لی اس نے یہاں جس نے وفا مانگی
Kabhi kafir kabhi mujrim bana shehar munafiq mein
Saza e mout li is ne yahan jis ne wafa mangi

اک وہ ظالم جو دل میں رہ کر بھی میرا نہ بن سکا
اور دل وہ کافر جو مجھ میں رہ کر بھی اس کا ہو گیا
Ek woh zalim jo dil mein reh kar bhi mera nah ban saka
Aur dil woh kafir jo mujh mein reh kar bhi is ka ho gaya

Sad Shayari

 

عمر بھررہے تیری جستجو میں ہم
تو نہ ملا کسی کافر کو جنت کی طرح
Umar bhr rhe teri justojoo mein hum
To nah mila kisi kafir ko jannat ki terhan

تمام شہر کا موضوع گفتگو ہے وہی
اسے کہنا بہت عام ہو رہا ہے وہ
Tamam shehar ka mauzo guftagu hai wohi
Usay kehna bohat aam ho raha hai woh

وہ جسے سمجھا تھا زندگی ، میری دھڑکنوں کا فریب تھا
مجھے مسکرانا سکھا کے وہ میری روح تک کو رلا گیا
Woh jisay samgha tha zindagi, meri dharkanon ka fraib tha
Mujhe muskurana sikha ke woh meri rooh taq ko rulaa gaya

کرو پھر سے کوئی وعدہ کبھی نہ پھر بچھڑنے کا
تمہیں کیا فرق پڑتا ہے ، بچھڑنے میں مکرنے میں
Karo phir se koi wada kabhi nah phir bichernay ka
Tumhe kya farq parta hai, bichernay mein mukarny mein


یاد آتے ہیں آج اُف گناہ کیا کئے
پہلا کہ محبت کر لی آخری یہ کہ تجھ سے کر لی
Yaad atay hain aaj uff gunah kya kiye
Pehla ke mohabbat kar li aakhri yeh ke tujh se kar li


خیال یار میں نیند کا تصور کیسا
آنکھ لگتی ہی نہیں جب سے ہے آنکھ لگی
Khayaal yaar mein neend ka tasawwur kaisa
Aankhh lagti hi nahi jab se hai aankhh lagi

نہیں ہے سنگ کوئی ہمسفر تو کیا ہوا
خاموشیاں ، ویرانیاں ، رسوائیاں تو ہیں
Nahi hai sang koi hamsafar to kya -hwa
Khamoshiyan, viraniyan, ruswaiyun to hain


میرے ساتھ وہ رہے گا تو زمانہ کیا کہے گا
میری اک یہی تمنا ، اسے اک یہی بہانہ
Mere sath woh rahay ga to zamana kya kahe ga
Meri ik yahi tamanna, usay ik yahi bahana


عشق وہ کھیل نہیں جو چھوٹے دل والے کھیلیں
روح تک کانپ جاتی ہے صدمے سہتے سہتے
Ishq woh khail nahi jo chhootey dil walay khelain
Rooh taq kanp jati hai sadme sahte sahte

تیری تمنا ، تیرا انتظار اور تنہا سا میں
تھک کر مسکرا دیا جب رو نہیں پایا
Teri tamanna, tera intzaar aur tanha sa mein
Thak kar muskura diya jab ro nahi paaya

یوں وفاؤ ں کے سلسلے مسلسل نہ رکھ کسی سے
لوگ اک خطا کے بدلے ساری وفائیں بھول جاتے ہیں
Yun wafaon k silsilay musalsal nah rakh kisi se
Log ik khata ke badlay saari wafayen bhool jatay hain

کون خریدے گا ہیروں کے دام تیرے آنسو
وہ جو درد کا تاجر تھا شہر چھوڑ گیا
Kon khareeday ga heeron ke daam tairay ansoo
Woh jo dard ka tajir tha shehar chore gaya

سب کچھ مل جاتا ہے اس دنیا میں فراز
فقط وہ شخص نہیں ملتا جس سے محبت ہو
Sab kuch mil jata hai is duniya mein frazz
Faqat woh shakhs nahi milta jis se mohabbat ho

نیند آتی نہ تھی جس کو میری صورت دیکھے بغیر
آج وہ لوگوں سے کہتا ہے یہ شخص دیکھا سا لگتا ہے
Neend aati nah thi jis ko meri soorat dekhe baghair
Aaj woh logon se kehta hai yeh shakhs dekha sa lagta hai

رات دروازے پہ کتنی دستکوں کے نشان تھے
پھر وہی پاگل ہَوا تھی ، پھر مجھ سے دھوکہ ہوا
Raat darwazay pay kitni dustakon k nishaan they
Phir wohi pagal -hwa thi, phir mujh se dhoka hwa

قابل دید آنکھیں اور ان آنکھوں سے
خود ہی پامال ہوئے خود ہی تماشا دیکھا
Qabil e deed ankhen aur un aankhon se
Khud hi pamaal hue khud hi tamasha dekha


رہنے دے یہ کتاب تیرے کام کی نہیں
اس میں لکھے ہوئے ہیں وفاؤں کے تذکرے
Rehne day yeh kitaab tairay kaam ki nahi
Is mein likhay hue hain wafaon ke tazkeray

گلے ملتے ہیں جب کبھی دو بچھڑے ہوئے ساتھی
ہم بے سہاروں کو بڑی تکلیف ہوتی ہے
Galaay mlitay hain jab kabhi do bichhre hue saathi
Hum be saharon ko barri takleef hoti hai

اس نے توڑا میرا دل اس سے کوئی شکائیت نہیں
یہ اس کی امانت تھی ، اسے اچھا لگا سو توڑ دیا
Us ne tora mera dil is se koi shikayat nahi
Yeh is ki amanat thi, usay acha laga so toar diya

اکیلے رات بھر تڑپتا رہا مریض شام غم غالب
نہ تم آئے ، نہ نیند آئی، نہ چین آیا ، نہ موت آئی
Akailey raat bhar tarapta raha mareez shaam gham ghalib
Na tum aeye, nah neend aayi, nah chain aaya, nah mout aayi

 

If you like this Urdu Sad Shayari then share it on Twitter, Facebook, WhatsApp and LinkedIn. Thanks A lot for visit…

Leave a Reply

%d bloggers like this: